١۔یہ سب سر وصدااسی کی طرف سے ہے

سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

صفحه کاربران ویژه - خروج
ذخیره کریں
 
تفسیر نمونہ جلد 22
ان آ یات کے مباحث حقیقت میں اس معنی کی طرف ایک اشارہ ہین کہ اس عالم میں ہرقسم کی تدبیر اسی کی پاک ذات کی طرف کوٹتی ہے ،موت وحیات کے مسئلہ سے لے کر، بے مقدار نطفہ سے انسان کی پیچیدہ خلقت تک اوراسی طرح سے وہ گوناں گوں حادثات جوانسان کی زندگی میں پیش آتے ہیں، جواُسے کسی نہ کسی طرح سے رلاتے ہے یاہنساتے ہیں ،یہ سب کچھ اسی کی طرف سے ہیں ۔
آسمان میں درخشندہ ترین ستارے اسی کے فرمان اوراسی کی ربوبیت کے ماتحت ہیں، اورزمین میں انسانوں کی غنا اور بے نیازی بھی اسی کی پاک ذات کی طرف لوٹتی ہے ،اور طبعاً نشائہ آخرت بھی اسی کے فرمان سے ہے ،کیونکہ وہ بھی اس جہان کی زندگی کوجاری رکھنے کے سلسلہ میں ایک جدید زندگی ہے ۔
یہ بیان ایک طرف توخط ِتوحید کوواضح کرتاہے اور دوسری طرف سے خط ِ معاد وقیامت کو، کیونکہ رحم کے اندر ایک بے مقدار نطفہ سے انسان کوخلق کرنے والا، اس کونئے سرے سے زندگی عطاکر نے پر بھی قادر ہے ۔
دوسرے لفظوں میں یہ سب چیزیں کداکی ، توحید افعالی توحید ربوبیت کوبیان کرتی ہیں، ہاں!یہ سب سروصدا اور آواز ے اسی کی طرف سے ہیں ۔
12
13
14
15
16
17
18
19
20
Lotus
Mitra
Nazanin
Titr
Tahoma