٢:گناہ اورقطع رزق کے درمیان رابط

سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

صفحه کاربران ویژه - خروج
ذخیره کریں
 
تفسیر نمونہ جلد 24
اوپر والی آیت سے ضمنی طور پر معلوم ہوتاہے کہ گناہ اورقطع رزق کے درمیان قریبی رابط ہے . اسی لیے ایک حدیث میں امام باقر علیہ السلام سے آ یاہے :
ان الرجل لیذ نب الذنب فیدرأعنہ الرزق وتلا ھٰذہ الاٰ یة : اذاقسموالیصر منھا مصبحین ولا یستثنون فطاف علیھا طائف من ربک وھم نا ئمون
بعض اوقات انسان گناہ کرتاہے تو اس کی روزی منقطع ہو جاتی ہے .اس کے بعد امام نے اوپر والی آ یت کی تلاوت کی ۔
جب انہوں نے یہ قسم کھائی کہ ہم صبح سویرے پھلوں کوتوڑلیں گے اوراپنے سواکسِی کوبھی اِ س سے فائدہ نہیں اٹھانے دیں گے ، لیکن اس وقت کہ جب وہ سوئے ہُوئے تھے تیرے پروردگار کی طرف سے ایک بلااس باغ پر مُسلّط ہوگئی اوراسے نابود کردیا ( 1)۔
ابن عباس سے بھی یہ نقل ہُوا ہے کہ گناہ اور روزی کے منقطع ہونے کاربط سورج سے بھی زیادہ واضح ہے جیساکہ خدا نے اسے سورۂ ن والقلم کی زیر بحث آیت میں بیان فرمایا ہے (2)۔
1۔تفسیر نورالثقلین ،جلد ٥،صفحہ ٣٩٥(حدیث ٤٤)۔
2۔ تفسیر المیزان ،جلد ٢٠ صفحہ ٣٧۔
12
13
14
15
16
17
18
19
20
Lotus
Mitra
Nazanin
Titr
Tahoma