ایک پُر معنی حدیث

سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

صفحه کاربران ویژه - خروج
ذخیره کریں
 
تفسیر نمونہ جلد 24
ایک حدیث میں پیغمبر گرامی (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم )سے آ یاہے :
مامن مولود یولد الافی شبابیک رأسہ مکتوب خمس اٰیات من سورة التغابن۔
کوئی نومولود متولّد نہیں ہوتا مگریہ کہ اس کے سرکے مشبکوں ( جالیوں ) پر سُورةتغابن کی پانچ آ یتیں ) لکھی ہوئی ہوتی ہیں (1) ۔
ممکن ہے اس سورہ کی یہی آخری آ یات مراد ہوں جو آمو آل اوراولاد کے بارے میں گفتگو کرتی ہیں .ان پانچ آ یات کاسر کی جالیوں پر لکّھا جانا اس مسئلہ کے حتمی ہونے کی طرف اشارہ ہے یعنی ان آ یات کامضمون تمام اولاد ِ آدم کے لیے بغیر کسِی استثناء کے مطلق ہے ۔
شبابیک شباک( بروزن خفاش) کی جمع ہے ( مشک )جالی کے معنیٰ میں ممکن ہے سر کی ان ہڈ یوں کی طرف اشارہ ہوجن کے ٹکرے ایک دُوسرے میں گُھسے ہوئے ہوتے ہیں یادماغ کی جالیوں کی طرف اشارہ ہو بہرحال یہ انسان میں ان روحیات وخصُو صیات کے موجُود ہونے کی دلیل ہے ۔
خداوندا! مال و آولاد اور بیویوں کی اس عظیم آزمائش میں ہماری مدد فرما ۔
پروردگارا! ہمیں بخل ،حرص اورشح نفس سے دُور رکھ ! کیونکہ جسے تو آن سے دُور رکھے گاوہی اہل ِنجات اور رستگارہیں ۔
بارالہٰا! توہمیں قیامت کے دن میں جب گنہگار بندوں کاغبن اورنقصان ظاہر ہوجائے گا ، اپنے لطف کے دامن میں اس تغابن سے بچائے رکھ ۔
1۔روح البیان ، جلد١٠، صفحہ ٢٤۔

آ مین یارب العالمین ۔
سورہ تغابن کا اختتام
12
13
14
15
16
17
18
19
20
Lotus
Mitra
Nazanin
Titr
Tahoma