سوره مؤمن/ آیه 67- 68

سایٹ دفتر حضرت آیة اللہ العظمی ناصر مکارم شیرازی

صفحه کاربران ویژه - خروج
ذخیره کریں
 
تفسیر نمونہ جلد 20
تخلیق انسانی کے سات مرحلے یہ ہے تمہارا رب

۶۷۔ہُوَ الَّذی خَلَقَکُمْ مِنْ تُرابٍ ثُمَّ مِنْ نُطْفَةٍ ثُمَّ مِنْ عَلَقَةٍ ثُمَّ یُخْرِجُکُمْ طِفْلاً ثُمَّ لِتَبْلُغُوا اٴَشُدَّکُمْ ثُمَّ لِتَکُونُوا شُیُوخاً وَ مِنْکُمْ مَنْ یُتَوَفَّی مِنْ قَبْلُ وَ لِتَبْلُغُوا اٴَجَلاً مُسَمًّی وَ لَعَلَّکُمْ تَعْقِلُونَ
۶۸۔ ہُوَ الَّذی یُحْیی وَ یُمیتُ فَإِذا قَضی اٴَمْراً فَإِنَّما یَقُولُ لَہُ کُنْ فَیَکُونُ

ترجمہ

۶۷ ۔ وہ وہی ہے جس نے تمہیں مٹی سے پیدا کیا، پھر نطفہ سے ، پھرجمے ہوئے خون سے ، پھر تم کو بچے کی صورت میں باہر بھیجتا ہے . پھر تم کمال قوت کے مرحلے تک پہنچ جاتے ہو . اس کے بعد تم بوڑھے ہوجاتے ہو . جب کہ تم میں سے کچھ لوگ اس مرحلے تک پہنچنے سے پہلے مرجاتے ہیں مقصد یہ ہے کہ تم اپنی زندگی کی مقررہ مدت تک پہنچ جاؤ او ر شایدعقل سے کام لو ۔
۶۸۔ وہ وہی خد ا ہے جوزندہ کرتاہے اور مار تاہے اورجب کسی امر کاارادہ کرتاہے توبس اس سے یہی کہہ دیتاہے کہ ہو جا ، تو وہ فوراً ہو جاتاہے ۔
تخلیق انسانی کے سات مرحلے یہ ہے تمہارا رب
12
13
14
15
16
17
18
19
20
Lotus
Mitra
Nazanin
Titr
Tahoma