خطیب خوارزمی
صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

خطیب خوارزمی

سوال: خطیب خوارزمی نے غدیر خم کے متعلق اپنے اشعار میں کیا کہا ہے؟
اجمالی جواب:
تفصیلی جواب: انہوں نے اس متعلق یہ اشعار نظم کیے ہیں


١۔ الا ھل من فتی کابی تراب امام طاہر فوق التراب
٢۔ اذا ما مقلتی رمدت فکحلی تراب مس نعل ابی تراب
٣۔ محمد النبی کمصر علم امیر المومنین لہ کباب
٤۔ ھو البکاء فی المحراب لکن ھو الضحاک فی یوم الحراب
٥۔ علی قاتل عمروبن ود یضرب عامر البلد الخراب
٦۔ حدیث برایه و غدیر خم و رایه خیبر فصل الخطاب
٧۔ ھما مثلا کہارون و موسی بتمثیل النبی بلا ارتیاب


١۔ کیا زمین کے اوپر ابو تراب جیسا جوانمرد اور پاک وپاکیزہ امام موجود ہے ؟!
٢۔ جب بھی میری آنکھوں میں در د ہوجایے گا تو ابو تراب کے خاک پا میرے آنکھوں کا چشمہ ہوگا ۔
٣۔پیغمبر خدا حضرت محمد مصطفی (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) شہر علم کی طرح ہیں اور حضرت امیر المومنین علی (علیہ السلام) اس شہر کے دروازہ کی طرح ہیں ۔
٤۔ آپ محراب عبادت میں بہت گریہ کرتے ہیں لیکن جنگ کے روز بہت زیادہ مسکراتے ہیں ۔
٥۔ علی (علیہ السلام) نے عمروبن عبدود کو قتل کیاایسی ضربت کے ذریعہ جس سے خراب شہر آباد ہوجاتے ہیں ۔
٦۔ حدیث برایت اور روایت غدیر خم اور حدیث رایت (پرچم) جنگ خیبر تمام باتوں کو ختم کردیتی ہیں ۔
٧۔ ان دونوں کی مثال ہارون اور موسی کی طرح ہے اور یہ ایسی مثال ہے جس کو خود پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) نے فرمایا ہے(١) (٢) ۔

حوالہ جات:

١۔ اس قصیدہ کے ٤٦ شعر ہیں جوکہ خود ان کی کتاب مناقب کے صفحہ ٣٩٩ پر چھپے ہیں ۔
٢۔ شفیعی شاہرودی، گزیدہ ای جامع از الغدیر، ص٤١٢۔
    
تاریخ انتشار: « 1396/01/04 »

منسلک صفحات

خطیب خوارزمی

ابن مکی نیلی

قاضی جلیس

ابن عودی نیلی

ملک صالح

CommentList
*متن
*حفاظتی کوڈ غلط ہے. http://makarem.ir
قارئین کی تعداد : 708