اہل بیت (علیہم السلام) کے بیان میں بارہ جانشینوں کی تصریح
صفحه کاربران ویژه - خروج
ورود کاربران ورود کاربران

LoginToSite

کلمه امنیتی:

یوزرنام:

پاسورڈ:

LoginComment LoginComment2 LoginComment3 .
ذخیره کریں
 

اہل بیت (علیہم السلام) کے بیان میں بارہ جانشینوں کی تصریح

سوال: کیا شیعوں کی حدیث کی کتابوں میں رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم ) کے بارہ جانشینوں کی تصریح بیان ہویی ہے؟
اجمالی جواب:
تفصیلی جواب: شیعوں کی روایات میں پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) کے جانشینوں کی تعداد بارہ افراد ذکر ہویی ہے ، یہاں پر ان میں سے بعض روایات کو ذکر کریں گے :

١۔ اصبغ بن نباتہ کہتے ہیں : میں نے حسن بن علی (علیہما السلام) سے سنا ہے کہ رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) کے بعد اماموں کی تعداد بارہ ہے ان میں سے نو امام میرے بھایی حسین کے صلب سے ہوں گے اور انہی میں سے ایک اس امت کے مہدی ہیں (١) ۔
٢۔ زرارہ کہتے ہیں : میں نے امام باقر (علیہ السلام) سے سنا ہے کہ آپ نے فرمایا :
"" نحن اثنا عشر امام منھم حسن و حسین ثم الایمه من ولد الحسین (علیہم السلام)"" ۔ ہم بارہ امام ہیں جن میں حسن اور حسین بھی ہیں ان کے بعد امام حسین کی اولاد سے نو امام ہیں (٢) ۔
٣۔ امام حسین (علیہ السلام) نے رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) سے سوال کیا:
"" یا رسول اللہ ! ھل یکون بعدک نبی؟ فقال : لا انا خاتم النبین ، لکن یکون بعدی ایمه قوامون بالقسط بعدد نقباء بنی اسراییل "" ۔ یا رسول اللہ ! کیا آپ کے بعد کویی نبی آیے گا؟ آنحضرت (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) نے فرمایا : نہیں ، میں خاتم الانبیاء ہوں ، لیکن میرے بعد امام آییں گے جو عدل و انصاف کو قایم کریں گے ان کی تعداد بنی اسراییل کے جانشینوں کے برابر ہے (٣) ۔
٤۔ حضرت زہرا (علیھا السلام) فرماتی ہیں : میں نے اپنے والد سے سنا ہے کہ آپ نے فرمایا :
""الایمه بعدی عدد نقباء بنی اسراییل ""۔ میرے بعد اماموں کی تعداد بنی اسراییل کے نقباء کے برابر یعنی بارہ ہے (٤) ۔
٥۔ امام صادق (علیہ السلام) نے فرمایا :
"" منا اثنا عشر مھدیا "" ہم بارہ اماموں میں سے ایک مہدی ہیں (٥) ۔
٦۔ امام سجاد (علیہ السلام) فرماتے ہیں :
"" ان اللہ خلق محمدا و علیا و احد عشر من ولدہ من نور عظمتہ، فاقامھم اشباحا فی ضیاء نورہ یعبدونہ قبل خلق الخلق، یسبحون اللہ و یقدسونہ وھم الایمه من ولد رسول اللہ (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم)""۔ یقینا خداوند عالم نے محمد ، علی اور ان کی اولاد سے گیارہ افراد کو اپنے نور سے خلق کیا اور ان کو اپنے نور کے زیرسایہ قرار دیا ، یہ نور مخلوق کی خلقت سے پہلے خدا کی عبادت کرتے تھے ، اس کی تسبیح و تقدیس کرتے تھے اور یہی رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) کی اولاد میں سے امام ہیں (٦) ۔
٧۔ امام علی (علیہ السلام) نے ایک طولانی حدیث میں اس طرح فرمایا ہے :
"" فان لھذہ الامه اثنا عشر اماما ھادین مھدیین، لا یضرھم خذلان من خذلھم"" ۔ یقینااس امت کی بارہ ہدایت کرنے والے اماموں نے ہدایت کی ہے ان کو ذلیل کرنے والوں کی ذلالت ان کو کویی نقصان نہیں پہنچاسکتی (٧) ۔
٨ ۔ جابر بن عبداللہ انصاری کہتے ہیں :
"" دخلت علی فاطمه (علیھا السلام) و بین یدیھا لوح فیہ اسماء الاوصیاء من ولدھا، فعددت اثنی عشر احدھم القایم، ثلاثه منھم محمد و اربعه منھم علی علیھم السلام"" ۔ میں حضرت فاطمہ (علیھا السلام) کے پاس گیا تو میں نے دیکھا کہ آپ کے سامنے ایک تختی رکھی ہویی ہے جس پر اوصیاء اور ان کی اولاد کے نام لکھے ہویے ہیں ، میں نے ان کو شمار کیا تو وہ بارہ تھے ، ان میں سے ایک قایم (علیہ السلام) ، تین محمد اور چار علی تھے (٨) ۔
٩ ۔ شیخ صدوق نے اپنی سند کے ساتھ رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) سے نقل کیا ہے کہ آپ نے فرمایا:
"" انا سید النبیین و علی بن ابی طالب سید الوصیین، و ان اوصیایی بعدی اثنی عشر، اولھم علی بن ابی طالب (علیہ السلام) و آخرھم القایم (علیہ السلام)"" ۔ میں انبیاء کا سردار اور علی بن ابی طالب ، اوصیاء کے سردار ہیں۔ اور یقینا میرے بعد بارہ وصی ہیں: ان میں سے پہلے علی بن ابی طالب اور سب سے آخری قایم ہیں (٩) ۔ (١٠) ۔

حوالہ جات:

١۔ کفایة الاثر، ص ٢٢٣، باب ٣٠ ، ح ١۔
٢۔ کافی ، ج ١، ص ٥٣٣ ، باب ١٨٤، ح ١٦۔
٣۔ مناقب ابن شھر آشوب ، ج ١ ، ص ٣٠٠۔
٤۔ کفایة الاثر ، ص ١٩٧، باب ٢٨ ، ح ٦۔
٥۔ کمال الدین ، ج ٢، ص ٣٨٨ ، باب ٣٣ ، ح ١٤۔
٦۔ کافی ، ج ١ ، ص ٥٣٠ ، باب ٣٣، ح ١٤ ۔
٧۔ کمال الدین ، ج ١ ، ص ٢٩٧ ، باب ٢٦ ، ح ٥۔
٨۔ من لا یحضرہ الفقیہ ، ج ٤ ، ص ١٨٠ ، ح ٥٤٠٨ ۔
٩۔ عیون الاخبار الرضا (علیہ السلام)، ج ١ ، ص ٦٤ ، ح ٣١، اعلام الوری ، ص ٣٩٦۔
١٠۔ علی اصغر رضوانی ، امام شناسی و پاسخ بہ شبھات (٢) ، ص ٢٥٦۔
    
تاریخ انتشار: « 1396/05/01 »

منسلک صفحات

حدیث ”اثناعشر خلیفہ“ کا سفینہ سے منقول حدیث سے تعارض

شیعوں کا چوتھی صدی سے حدیث ”اثناعشر خلیفہ“ سے تمسک کرنا

احمد کاتب اور شیعہ راویوں کی تضعیف

احمد کاتب اور حدیث ”اثناعشر خلیفہ“ کی تضعیف

بارہ خلفاء میں سے ابوبکر اور عمر پہلے خلیفہ!!!

CommentList
*متن
*حفاظتی کوڈ غلط ہے. http://makarem.ir
قارئین کی تعداد : 1009